ایسی تحاریر جن میں تخلیقیت اور سادگی کے ساتھ سجمھ کا عنصر حاوی ھو۔


کچھ ناموں کا وجود نھیں ھوتا کچھ ناموں کو صرف نام ھی رھنا چاھیے۔ان کا وجود کبھی حقیقت نھیں بننا چاھیے کیونکہ نام اور حقیقت دونوں ایک نھیں ھوتے۔کردار کیا ھوتا ھے کیا نام اور کردار ایک ھی حقیقت کو عیاں کرتے ھیں ؟ وجود اور نام کا آپس میں کیا تعلق ھوتا ھے؟
وہ نام جن کا وجود نھیں ھوتا ھونا بھی نھیں چاھیےنام کے بھت سھارے ھوتے ھیںمگر وجود کے سھارے نھیں ملتے۔اگر ان ناموں کا وجود سامنے آجائے تو نام کا یقین حقیقت سے دور اور وجود حقیقت کے پاس آجاتاھے مگر نام حقیقت نھیں وجود حقیقت ھوتا ھے۔نام سب سے بڑی حقیقت کی ضد ھوتی ھے۔ دنیا ناموں کے سھارے کبھی نھیں سمجھتی ۔وجود کے دھوکے تو سمجھ لیتی ھے مگر ناموں کے اعتقاد کو نھیں جان پاتی۔
اس لیے کچھ ناموں کے وجود نھیں ھوتے مگر خوفناک حقیقت اس وقت منظر عام پر آتی ھے جب وہ نام جن کا وجود نھیں ھوتا کسی وجود کا نام بن جاتے ھیں ۔وجود نام کا بوجھ اُٹھائے ھوئے سامنے آجاتا ھے مگر نام ؟ ھمارے ناموں کا تو وجود نھیں ھوتا ھونا بھی نھیں چاھیے ھم برداشت نھیں کرسکتے اس وجود کو،ھمیں تو صرف نام کی ضرورت ھوتی ھے۔
اسی طرح کچھ مذاھب کا خدا نھیں ھوتا ۔یہ مذاھب تو بھت اچھے ھوتے ھیں ان کی عبادت میں بھت سرور ھوتا ھے مگر ان مذاھب میں خدا نھیں ھوتا اور اگر خدا آجائے تو؟ نھیں کچھ مذھب بغیر خدا کے ھی قایم رھتے ھیں ۔ان میں خدا کی ضرورت نھیں ھوتی اس میں کوئے سزا جزا نھیں ھوتی۔یہ مذھب آزادی کا پیکر ھوتا ھے اس میں ھر پنچھی آزاد ھوتا ھے،مذھب کی قید موجود ھوتی ھے مگر خدا کی بندش نھیں ھوتی اور اگر ان مذاھب کا خدا پیدا ھوجائے ؟پھر ؟اگر ان مزاھب کا خدا آجائے پھر؟ پھر؟ ھم کیا کر یں گے ھمیں تو صرف مذاھب کی ضرورت تھی خدا کی نھیں ۔ان مذاھب میں خدا نھیں آنا چاھیے اگر خدا کا ساتھ مل گیا تو ھم کیا کریں گے،کیونکہ کچھ مذاھب کے خدا نھیں ھوتے ۔سچ میں بالکل نھیں ھوتے اور اگر کھیں سے وجود میں آجائے تو ؟ نھیں
کچھ مذاھب کے خدا نھیں ھوتے،
کچھ ناموں کا وجود نھیں ھوتا،
(نامکل)

Writter: fareeha farooq. 
Advertisements

Comments on: "کچھ ناموں کا وجود نھیں ھوتا" (2)

  1. Agar kisi ko samjh na aai is ki to usay is cheeze pay afsos ho ga wo samajh kiun nai saka…or agar samjh aa gai to ziada afsos ho ga k aakhir samajh aai hi kiun :(…is say behter to na samjhna tha!

  2. @maria Iqbal yes u right its vain to read it if u unable to understand it and its sad if u understand it but still the worst part of the story is ,one who wrote it has experienced it :(so it happens iis tarha tu hota hai iss tarha ki baaton main …:()

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

ٹیگ بادل

%d bloggers like this: