ایسی تحاریر جن میں تخلیقیت اور سادگی کے ساتھ سجمھ کا عنصر حاوی ھو۔

                          کبھی سوچا ھے تم نے ھم کیسے دیکھتے تھے
زندگی کی سولی پر چڑھنے سے پھلے
جذباتوں کی گنگا میں بھنے سے پھلے
کبھی سوچا ھے تم نے ھم کیسے دیکھتے تھے
جوانی کی سیڑھی پر پر چڑھنے سے پھلے
بڑھاپے میں منہ کے بل گرنے سے پھلے
کبھی سوچا ھے تم نے ھم کیسے ھنستے تھے
محبت کی راھوں میں رُلنے سے پھلے
خوابوں کی گلیوں میں گھُلنے سے پھلے
کبھی سوچا ھے تم نے ھم کیسے لگتے تھے
مجبوریوں کی چکی میں پسنے سے پھلے
زمہ داریوں کے بوجھ میں پھنسنے سے پھلے
کبھی سوچا ھے تم نے ھم کیسے کھلتے تھے
گناھوں کے بھنور میں اُلجھنے سے پھلے
نیکیوں کے سمندر میں اُبھرنے سے پھلے
کبھی سوچا ھے تم نے ھم کیسے لگتے تھے
غلطیوں کے بوجھ تلے دھنسنے سے پھلے
روز روز زندگی میں مرنے سے پھلے
کبھی سوچا ھے تم نے ھم کیسے دیکھتے تھے
دیکھا ھے ھم ایسے دیکھتے تھے
سوچا ھے ھم ایسے لگتے تھے
جانا ھے ھم ایسے ھنستے تھے

Written by: Fareeha Farooq 
Advertisements

Comments on: "کبھی سوچا ھے تم نے ھم کیسے دیکھتے تھے" (2)

  1. I m really thankful for writing this…

  2. Thanks……………

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

ٹیگ بادل

%d bloggers like this: